In خبریں

صدر مسلم کانفرنس کا دورہ برطانیہ سے واپسی پر کارکنان اسلام آباد ایئر پورٹ پر استقبال کر رہے ہیں

اسلام آباد
آل جموں و کشمیرمسلم کانفرنس کے صدر و سابق وزیر اعظم آزادکشمیر سردار عتیق احمد خان نے کہا ہے کہ پاک بھارت مذاکراتی عمل میں تعطل عالمی سطح پر تشویش کا باعث ہے ۔ مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل کے لیے بین الاقوامی ثالثی ناگزیر ہے۔ برطانیہ مغربی دنیا میں کلیدی کردار ادا کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ پاکستانی سفارتخانوں کو جماعتوں کے بجائے پاکستان کی نمائندگی پر مامور کیا جائے ۔ تارکین وطن مملکت پاکستان کا سرمایہ ہیں ۔ تارکین وطن کو دوہرے ووٹ کا حق دے کر قومی دھارے میں شامل کیا جائے۔ بیرونی دنیا میں مقیم تارکین وطن کوجماعتی ، گروہی اور علاقائی معاملات سے بالا تر ہو کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ تحریک آزادی کشمیر تمام طبقات کی مشترکہ کاوشوں کی متقاضی ہے۔ نواز حکومت اپنی سیاسی افادیت سے مکمل طور پر محروم ہو چکی ہے۔ دھرنے کی کامیابی اسلامیان پاکستان کی فتح ہے۔ مسلح افواج پاکستان نے ایک بار پھر ملک کی ناگزیر قوت ہونے کا ثبوت دیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے برطانیہ سے واپسی پر اسلام آباد ایئرپورٹ پر میڈیا نمائندگان اور کارکنان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ آج سہ پہر جب سردار عتیق وطن واپس پہنچے تو ایئر پورٹ پر اُن کا فقید المثال استقبال کیا گیا ۔ مسلم کانفرنس کی سیکرٹری جنرل مہرالنساء، ممبر اسمبلی سردار صغیر چغتائی، چیئرمین پارلیمانی بورڈ راجہ محمد یٰسین خان، سیکرٹری اطلاعات سردار واجد بن عارف ایڈووکیٹ، سیکرٹری مالیات سردار افتخا ررشید، اسلام آباد سرکل کے صدر سردار عبدالرازق خان ایڈووکیٹ، پونچھ ڈویژن کے صدر میجر (ر) نصراللہ خان، ضلع راولپنڈی کے صدر ساجد قریشی ایڈووکیٹ، مسلم کانفرنسی رہنماؤں سردار منظور خان، ڈاکٹر عابد عباسی، ذوالفقار بھٹی ، کلیم ارباب، رانا غلام حسین، راجہ محمد اقبال، شاہین قریشی، راجہ عبدالجبار کے علاوہ درجنوں کارکنوں نے اپنے قائد کا والہانہ استقبال کیا ۔ سردار عتیق احمد خان نے کہا کہ دورہ برطانیہ انتہائی کامیاب رہا۔ مسلم کانفرنس برطانیہ کے کارکنان اور تارکین وطن مبارکباد کے مستحق ہیں۔ جنھوں نے بھرپور پروگرامات کا اہتمام کیا۔ مسلم کانفرنس برطانیہ میں نہایت مضبوط سیاسی قوت کی حیثیت رکھتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہندوستان کے کشمیریوں پر مظالم کو دنیا بھر میں اجاگر کریں گے۔ کشمیریوں کی قربانیاں رائیگاں نہیں جا سکتی۔ برطانیہ انصاف کے تقاضے پورے کرتے ہوئے کشمیریوں کی حمائت کرے۔ سردار عتیق نے کہا کہ پاک امریکہ تعلقات میں بہتری کے امکانات تلاش کیے جائیں۔ پاک چین اقتصادی راہ داری سے مسئلہ کشمیر کے حل کی نئی امید نے جنم لیا ہے۔ اقتصادی راہداری کی بنیاد خطہ کشمیر کی سرزمین ہے۔ جموں وکشمیر کی سرزمین عالمی اقتصادی تبدیلیوں کی بنیاد بن چکی ہے۔ جو اہل کشمیر اور خطے کی عوام کے لیے حوصلہ افزاء ہے۔